ڈر لگتا ہے (via Pakistan and Future)

Janay Kab Kon Kisay Maar day Kaafir Keh Kar
Shaher ka shaher Musalmaan Huwaa Phirta Hay

ڈر لگتا ہے بہت سال پہلے جب میں پاکستان میں چھپ چھپ کر مارکس کی داس کپیٹل پڑھتا تھا . اور کہیں سے بائبل کا نسخہ لا کر پڑھتا تھا . اور انٹر نَشنل اسلامی یونی ورسٹی کے ہوسٹل میں شراب کی بوتل لا کر چھپ کر پیتا تھا تو مجھے ڈر نہیں لگتا تھا. پنجاب یونی ورسٹی کے ہوسٹل میں کمبل کٹ کھا کر بھی کوئی خوف نہیں آیا. اور ملتان میں تیس دن تک ڈاکٹر اسرار کا خطبہ سننے کے بعد ان کے ساتھ مذاق کرنے سے بھی ڈر نہیں لگتا تھا. نہ ہی ابو کے سامنے غلام احمد قادیانی کی کشتی … Read More

via Pakistan and Future

Advertisements

Leave a comment

Filed under Religion and Politics

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s